فضائلِ عشرۂ رحمت

Sat, 2 Apr , 2022
91 days ago

خُدائے رَحمٰن عَزَّوَجَلَّ کا کروڑہا کروڑ اِحسان کہ اُس نے ہمیں ماہِ رَمَضَان جیسی عظیمُ الشّان نِعمت سے سَرفَراز فرمایا۔ ماہِ رَمَضَان کے فِیضَان کے کیا کہنے !اِس کی تو ہر گھڑی رَحمت بھری ہے۔اِس مہینےمیں اَجْر و ثَواب بَہُت ہی بڑھ جاتاہے۔نَفْل کا ثواب فَرض کے برابر اور فَرْض کا ثواب 70 گُنا کردیا جاتا ہے ۔بلکہ اِس مہینے میں تو روزہ دار کاسونا بھی عبادت میں شُمار کیا جاتاہے۔عَرش اُٹھانے والے فِرِشتے روزہ داروں کی دُعاء پرآمین کہتے ہیں اور ایک حدیثِ پاک کے مُطابِق رَمَضَان کے روزہ دار کے لئے دریا کی مچھلیاں اِفطار تک دُعائے مَغْفِرت کرتی رہتی ہیں۔‘‘ (اَلتَّرغیب والتَّرہیب ج2ص55حدیث6، دار الکتب العلمیہ)

رمضان المبارک کے چاند رات کے بعد 10 دن یہ عشرہ رحمت کہلاتے ہے ، 10 دن پورے ہونے کے بعد دسواں سورج غروب ہوگیا تو یہ عشرہ مغفرت شروع ہوگیا ، اب یہ 10 دن رہے گا، اب جیسے ہی 20 کا روزہ مکمل ہوا اور سورج غروب ہوگیا تو اب یہ کہ جَہَنَّمْ سے آزادی کا عشرہ شروع ہوگیا یعنی خصوصیت کے ساتھ پہلے عشرے میں رحمت کا نزول، دوسرے میں مغفرت ہےاور تیسرے میں جہنم سے آزادیاں۔

٭عشرہ رحمت: رحمتیں لٹاتا ہے لہذا اس حوالے سے ہم اس کے فضائل جانتے ہے وہ کیاہے نیزاس میں ہمیں کون سی دعاپڑھنی ہے۔

٭(مراۃ المناجیح جلد 3،صفحہ 141 ،تحت الحدیث،مکتبہ ضیاء القراٰن)میں ہے: پہلے عشرہ میں رب تعالیٰ مؤمنوں پر خاص رحمتیں فرماتا ہے جس سے انہیں روزہ، تراویح کی ہمت ہوتی ہے اور آئندہ ملنے والی نعمتوں کی استعداد(یعنی طاقت) پیدا ہوتی ہے۔

اس عشرہ کے ابتداء سے ہی جنت کے دروازے کھل جاتے ہیں ا ور دوزخ کے دروازے بندکردیئے جاتے ہیں شیاطین زنجیروں میں جکڑ دیئے جاتے ہیں۔ایک روایت میں ہے کہ رحمت کے دروازے کھولے جاتے ہیں۔(مسلم،بخاری) (مراٰۃ المناجیح،ج:3،ص:132)۔

٭حضرت جابر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہما سے روایت جب رمضان کی پہلی رات آتی ہےاللہ عزوجل نظر رحمت فرماتا ہےجس پر اللہ پاک نظر رحمت فرمائےاس کو کبھی بھی عذاب نہیں ہوگا۔(اَلتَّرغیب والتَّرہیب ج2ص56حدیث7، دارالکتب العلمیہ،) اس مہینہ میں جو کوئی بھی گناہ کرتا ہے وہ اپنے نفس امارہ کی شرارت سے کرتا ہے نہ کہ شیطان کے بہکانے سے۔(مراٰۃ ،ج:3،ص:134)

٭حضرت سَیِّدُنا عبدُاللّٰہ ابن عباس ر َضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا سے مروی ہے کہ رحمت عالم صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا فرمانِ معظم ہے : ’’جب رَمضان شریف کی پہلی رات آتی ہے تو عرش عظیم کے نیچے سے مَثِیْرہ نامی ہوا چلتی ہے جوجنت کے درختوں کے پتو ں کو ہلاتی ہے، اِس ہوا کے چلنے سے ایسی دِلکش آواز بلند ہوتی ہے کہ اِس سے بہتر آواز آج تک کسی نے نہیں سنی۔اِس آواز کوسن کربڑی بڑی آنکھوں والی حوریں ظاہر ہوتی ہیں یہاں تک کہ جنت کے بلند محلات پر کھڑی ہوجاتی ہیں اور کہتی ہیں :’’ہے کوئی جو ہم کو اللہ تَعَالٰی سے مانگ لے کہ ہمارا نکاح اُس سے ہو؟‘‘ پھر وہ حوریں داروغۂ جنت (حضرت)رِ ضوان (عَلَیْہِ وَالسَّلَام) سے پوچھتی ہیں : ’’آج یہ کیسی رات ہے؟‘‘ (حضرت) رِ ضوان (عَلَیْہِ السَّلَام) جواباً تَلْبِیَہ (یعنی لبَّیْک) کہتے ہیں ، پھر کہتے ہیں :’’یہ ماہِ رَمضان کی پہلی رات ہے، جنت کے دروازےاُمّتِ مُحمّد عَلٰی صَاحِبِہَا الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کے روزے داروں کے لئے کھول دئیے گئے ہیں ۔ ‘‘(اَلتَّرغیب والتَّرہیب، ج 2 ،ص60، حدیث 23)

٭ بلعموم پورا ہی سال اوربلخصوص رمضان شریف میں ہمیں اس مقولہ کا مصداق بنا رہنا چاہیے’’ رِضائے مولیٰ ازہَمہ اَولیٰ‘‘ یعنی اللہ عزوجل کی مرضی سب سے بہتر ہے۔ یو تو اللہ پاک کی رحمت ہمارے اوپر سارا ہی سال رہتی ہے۔اور رمضان المبارک اس میں مزید اضا فہ ہوجاتا ہے نیز رمضان المبارک کے ابتدائی 10 دن یہ خصوصیت کے ساتھ اللہ پاک سے رحمت طلب کرنے کے ہے اسی لئےانہیں کہا ہی عشرہ رحمت جاتا ہے یعنی رحمت والے دس دن ۔تو لہذا ہمیں ان دس دنوں میں خصوصیت کے ساتھ اپنے رب کریم سے اس کی رحمت طلب کرنا چاہیئے ۔ اللہ پاک اپنے بندہ سے اس سے مانگنے کو پسند فرماتا اور اس کی رحمت سے بڑے بڑے گناہ گار بخشے جاتے ہے۔ ارشاد باری تعالی ہے:

قُلْ یٰعِبَادِیَ الَّذِیْنَ اَسْرَفُوْا عَلٰۤى اَنْفُسِهِمْ لَا تَقْنَطُوْا مِنْ رَّحْمَةِ اللّٰهِؕ-اِنَّ اللّٰهَ یَغْفِرُ الذُّنُوْبَ جَمِیْعًاؕ-اِنَّهٗ هُوَ الْغَفُوْرُ الرَّحِیْمُ(۵۳) (پ:24/ الزمر:53) ترجمہ کنزالایمان:’’ تم فرماؤ اے میرے وہ بندو جنہوں نے اپنی جانوں پر زیادتی کی ،اللہ کی رحمت سے نااُمید نہ ہو بےشک اللہ سب گناہ بخش دیتا ہے ، بےشک وہی بخشنے والا مہربان ہے۔

احادیث شریف میں ہے ۔پیارے آقا ﷺ کی بارگاہ میں جبرئیل امین علیہ السلام حاضر ہوئے اس حال میں کے آپ منبر پر چڑھ رہے تھے اس وقت تین دعائیں کی جن پر آپ علیہ السلام نے امین کہا (پیارے آقا علیہ السلام کی زبان مبارکہ سے جاری ہونے والی کوئی بات رائیگا نھی جاتی) ان میں ایک دعا یہ تھی جس نے ماہِ رمضان کو پایا اور اپنی بخشش نہ کروا سکا تو اس پر آپ نے امین فرمایا۔ (صحیح ابن حبان،ح:410،باب حق الوالدین ،ج:1،ص:315، دارالکتب العلمیہ۔بیروت )

اَبرِ رحمت چھاگیا ہے اور سماں ہے نُورنُور

فضلِ رب سے مغفرت كا ہوگیا سامان ہے

پہلے عشرے کی دعا

رَبِّ اغُفِرُ وَارُحَمُ وَأَنُتَ خَیُرُ الرَّاحِمِينَ۔

ترجمہ:’’ اے میرے رب مجھے بخش دے، مجھ پر رحم فرما، تو سب سے بہتر رحم فرمانے والا ہے۔‘‘


دعوتِ اسلامی کے شعبہ اصلاح اعمال (اسلامی بہنیں) کے زیر اہتمام 31 مارچ 2022ءبروز جمعرات صوبہ بلوچستان ڈویژن کوئٹہ کی کابینہ کوئٹہ میں اصلاح اعمال اجتماع منعقد ہواجس میں 37 ذمہ داراسلامی بہنوں نے شرکت کی ۔

پاکستان سطح اصلاح اعمال ذمہ دار اسلامی بہن نے ’’قبر میں کام آنے والے اعمال‘‘ کے موضوع پر سنتوں بھرا بیان کیا جس میں فکر آخرت کا ذہن دیتے ہوےاسلامی بہنوں کو نیک اعمال پر عمل کا ذہن دیا اور کم ازکم ایک اسلامی بہن کا رسالہ جمع کروانے کی ترغیب دلائی۔ مزید درود پاک اور تہجد پڑھنے کے فضائل بتائے اور رمضان المبارک میں تلاوت قراٰن پاک کرتے ہوئے دو ختم قراٰن کرنے کی ترغیب دلائی۔ 


دعوتِ اسلامی کے تحت  29مارچ 2022ء کو کراچی ڈویژن ون کے مدنی مشورے کا انعقاد ہواجس میں کراچی سٹی نگران ، کراچی ڈویژن ون نگران ، ضلع اور ٹاؤن نگران اسلامی بہنوں نے شرکت کی ۔

پاکستان مشاورت نگران اسلامی بہن نے سابقہ سال کے سالانہ ڈونیشن کا فالو اپ کیا اور رواں سال ڈونیشن کے حوالے سے اسلامی بہنوں کو نکات بتائے نیز ماہ رمضان المبارک میں ہونے والے کورسز کے حوالے سے تبادلہ خیال بھی ہوا۔

٭اسی طرح پاکستان کے شہر راولپنڈی میں پاکستان مجلس مشاورت نگران اسلامی بہن نے29مارچ2022ء کو کراچی ڈویژن ٹو کا آن لائن مدنی مشورہ لیا جس میں کراچی سٹی نگران، کراچی ڈویژن ٹو نگران ، ضلع اور ٹاؤن نگران اسلامی بہنوں نے شرکت کی۔


شبعہ تعلیم (اسلامی بہنیں) دعوت اسلامی کے تحت پچھلے دنوں مظفر گڑھ میں قائم ڈگری کالج برائے خواتین میں Welcome Ramazan

کورس کا انعقاد ہواجس میں لیڈی نسپل اور ٹیچرز کی تعداد 15 اور 500 کے قریب طالبات نے شرکت کی۔

مبلغہ دعوت اسلامی نے ’’ رمضان کے فضائل‘‘ کے موضوع پر سنتوں بھرا بیان کیا اور ملک و بیرون ملک میں ہونے والی دعوت اسلامی کی دینی خدمات کے حوالے سے بتاتے ہوئے انہیں فیضان آن لائن کورسز کے تحت ہونے والے کورسز کرنے کا ذہن دیا ۔

آخرمیں لیڈی پر نسپل صاحبہ نے ملاقات پر ماہانہ کا لج میں اس طرح کے سیشن کروانے کی نیتیں پیش کیں اور کالج نوٹس بورڈ پر آن لائن کورسز کے پمفلٹ آویزاں کر وا دیئے نیز لیڈی ہا سٹل وارڈن نے ہاسٹل میں ہفتہ وار اجتماعات کر وانے کی خواہش کا اظہار کیا۔ 


دعوتِ اسلامی کے زیر اہتمام 30 مارچ 2022ء  کو نگران عالمی مجلس مشاورت ذمہ دار اسلامی بہن نےمقامی اسلامی بہنوں کے ہمراہ ملکر ڈویژن پیر کالونی کے ذیلی حلقے میں گھر گھر جا کر اسلامی بہنوں پر انفرادی کوشش کرتے ہوئے انہیں ہفتہ وار سنتوں بھرے اجتماع میں شرکت کا ذہن دیتے ہوئے انہیں اجتماع پاک میں شرکت کی نیتیں کروائیں ۔

دوسری جانب علاقہ گارڈن میں ہفتہ وار سنتوں بھرے اجتماع کا انعقاد ہوا جس میں مقامی اسلامی بہنوں نے شرکت کی۔ نگران عالمی مجلس مشاورت ذمہ دار اسلامی بہن نے سنتوں بھرا بیان کیا۔ آخر میں ڈونیشن کی ترغیب دلاتے ہوئے اسلامی بہنوں کو زیادہ سے زیادہ ڈونیشن جمع کروانے کا ذہن دیا ۔


حضرت پیر سید صبغت اللہ شاہ  راشدی قادری رحمۃُ اللہِ علیہکی ولادت 1183ھ/ 1779ء کو پیر جو گوٹھ ضلع خیر پور میرس (سندھ)میں ہوئی۔

تعلیم:اپنے والد صاحب کی زیر سرپرستی درگاہ شریف پر مروجہ نصاب کی تعلیم حاصل کی اور والد صاحب سے مثنوی شریف ودیگر تصوف کی کتب کا درس لیا،خاندان میں آپ پہلے پیر ہیں جو پیر پگارہ (صاحب دستار)کے لقب سے مشہور ہوئے۔آپ قرآن پاک، حدیث شریف اور فقہی احکام پر دسترس رکھتے تھے۔ روزانہ بعد نماز فجر درس حدیث دینا آپ کا معمول تھا۔

بیعت وخلافت: اپنے والد ماجد امام العارفین حضرت پیر سید محمد راشد پیر صاحب روضے دھنی (وفات 1234ھ) کے دست اقدس پر سلسلہ عالیہ قادریہ راشدیہ میں بیعت ہوئےاور ان کی خدمت میں رہ کر سلوک کی منازل طے کیں۔والد صاحب کی وفات کے بعد 50سال کی عمر میں اپنے والد صاحب کی جگہ مسند رشدوہدایت پر فائز ہوئےاور دستار سجادگی آپ کے سر پر باندھی گئی۔

دینی کتب سے دلچسپی:آپ کو دینی،علمی اور صوفیانہ کتب سے خاص دلچسپی تھی۔اہم ومفید کتابوں کو جمع کرنا زندگی بھر دستور رہا اس لئے آپ کے کتب خانہ میں نادر ونایاب کتب کا ذخیرہ جمع ہوگیا تھا۔

عادات وخصائل: سنت مبارکہ کے پابند،پرہیزگار،شب بیدار،سخی، مہمان نواز،خلق عظیم سے آراستہ ،سادگی پسنداور غریب کسانوں کے ہمدرد تھے۔متوکل ایسے کہ جو موجود ہوتا راہِ خدا میں خرچ فرمادیتے اور کل کے لئے بچا کر نہیں رکھتے تھے۔

مقام ومرتبہ: حضرت پیر سید صبغت اللہ شاہ راشدی قادری رحمۃُ اللہِ علیہکی سندھ میں مقبولیت اور ان کے علمی وروحانی مراتب کا اندازہ سید حمید الدین کے اس بیان سے ہوتا ہے:”باشندگان سندھ کے نزدیک سارے ملک(متحدہ ہندوستان)میں ان (پیر صبغت اللہ)جیسا کوئی شیخ ومرشد نہیں،تقریباً تین لاکھ بلوچ ان کے مرید ہیں،مرجع خلق عام ہیں،جاہ وجلال سے زندگی گزار رہے ہیں۔جودو کرم ،اخلاص ومروت میں بھی شہرۂ آفاق ہیں۔ان کا کتب خانہ بڑا عجیب وغریب کتب خانہ ہے۔بادشاہوں اور امراء کے پاس بھی ایسا کتب خانہ نہ ہوگا ،15000ہزار معتبر کتابیں اس میں موجود ہیں۔“

معمولات:ہر سال نہایت عقیدت واحترام کے ساتھ جشن میلاد النبی صلی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلمکا انعقاد فرماتے تھے۔ حضور پرنور صلی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلمکی نعت اور صوفیانہ کلام بغیر مزامیر(ساز) کے سماعت فرماتےاور اسے اپنی روحانی خوراک قرار دیتے۔ روزانہ ختم قادریہ کرتے، آپ اور آپ کے مریدین بڑی عقیدت کے ساتھ حضور غوث اعظم رحمۃُ اللہِ علیہ کی نیاز دلایا کرتے۔

تبلیغ دین: رشدوہدایت اور تبلیغ دین کے لئے دوردراز علاقوں تک سفر کیااور معرفت کا پیغام گھر گھر پہنچایا۔ جہاں بھی گئے وہاں ذکر ونعت شریف کی محافل ضرور قائم کیں ،اس طرح خشک دلوں کو معرفت کی چاشنی نصیب ہوئی۔

وصال: 6رمضان المبارک 1246ھ/1831ء کو 63سال کی عمر میں آپ کا وصال ہوا۔

(انسائیکلو پیڈیا اولیائے کرام ،1/377،انوار علمائے اہل سنت سندھ،ص359،تذکر ہ صوفیائے سندھ،ص273)

از:مولانا محمد گل فراز عطاری مدنی

(سینئر اسلامک ریسرچ سینٹر دعوتِ اسلامی، المدینۃ العلمیہ)


بھدرکھاریاں میں ڈپٹی کمشنر اسلام آباد حمزہ شفقت کے چچا کی وفات پر شعبہ رابطہ شخصیات اسلام آباد کے ذمہ داران (عامر عطاری اور ناصر عطاری مدنی چینل) نے تدفین و دعا میں شرکت کی۔

ذمہ داران نے ڈپٹی کمشنر سے تعزیت کرتے ہوئے انہیں صبر کی تلقین کی اور مرحوم کےلئے زیادہ سے زیادہ ایصالِ ثواب کرنے کی ترغیب دلائی جس پر انہوں نے شکریہ کا اظہار کیا۔

اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نے ذمہ داران سے اسلام آباد میں اپنے گھر پر چچا کے ایصال ثواب کے لئے دعا کا اہتمام کرنے کی درخواست کی۔(رپورٹ:شعبہ رابطہ برائے شخصیات، کانٹینٹ:غیاث الدین عطاری) 


دعوتِ اسلامی کے شعبہ کفن دفن کے تحت یکم اپریل 2022ء بروز جمعہ مراد میمن ٹاؤن کراچی کے علاقے جام کنڈا کی جامع مسجد الفتح میں سیکھنے سکھانے کا حلقہ لگایا گیا جس میں ذمہ داران سمیت مقامی اسلامی بھائی شریک ہوئے۔

اس حلقے میں ڈسٹرکٹ ذمہ دار نیاز عطاری نے غسل میت دینے کے فضائل بیان کرتے ہوئے شرکا ئے حلقہ کوغسلِ میت دینے، کفن کاٹنے اور پہنانے کا طریقہ سکھایا۔

اس موقع پر نگرانِ جام کنڈا ٹاؤن شہریار عطاری، ناظم ِجامعۃ المدینہ بوائز اویس شورو، ٹاؤن ذمہ دار زوہیب عطاری، امام و خطیب علی خان عطاری، امام وخطیب اویس عطاری، امام و خطیب بلال عطاری اورقاری ارشد عطاری موجود تھے۔(رپورٹ:عزیر عطاری رکن شعبہ کفن دفن، کانٹینٹ:غیاث الدین عطاری)


گزشتہ دنوں پنجاب پاکستان کے شہر ننکانہ میں قائم المعصوم کالج میں دعوتِ اسلامی کے زیرِ اہتمام سیکھنے سکھانے کا حلقہ لگایا گیا جس میں کالج کےاسٹوڈنٹس نے شرکت کی۔

دورانِ حلقہ ڈویژن ذمہ دار شعبہ تعلیم نے اسٹوڈنٹس کے درمیان سنتوں بھرا بیان کرتے ہوئے اُن کی استقبالِ ماہِ رمضان کے حوالے سے ذہن سازی کی۔

بعدازاں ذمہ دار نے وہاں موجود اسٹوڈنٹس کو ماہِ رمضانُ المبارک میں اعتکاف کرنے کی ترغیب دلائی جس پر انہوں نے اچھی اچھی نیتیں کیں۔(رپورٹ:غلام یاسین عطاری دفتر ذمہ دار، کانٹینٹ:غیاث الدین عطاری)


دعوتِ اسلامی کے زیرِ اہتمام یکم اپریل 2022ء بروز جمعہ پنجاب پاکستان کے شہر سید والا ضلع ننکانہ میں سنتوں بھرے اجتماع کا انعقاد ہوا جس میں عاشقانِ رسول کی تعداد ہزاروں میں تھی۔

اس اجتماعِ پاک میں مرکزی مجلسِ شوریٰ کے رکن حاجی یعفور رضا عطاری نے سنتوں بھرا بیان کرتے ہوئے اسلامی بھائیوں کی دینی و اخلاقی اعتبار سے تربیت کی۔

اس کے علاوہ رکنِ شوریٰ نے بری صحبت اور جوے سمیت معاشرے میں پائی جانے والی دیگر بیماریوں سے بچنے کے حوالے سے مدنی پھول دیئے جس پر شرکائے اجتماع نےاچھی اچھی نیتوں کا اظہار کیا۔(رپورٹ:غلام یاسین عطاری دفتر ذمہ دار، کانٹینٹ:غیاث الدین عطاری)


پچھلے دنوں شعبہ رابطہ برائے وکلاء دعوتِ اسلامی کے ذمہ دار اسلامی بھائی نے پرائز بانڈ مارکیٹ نزد نیو میمن مسجد بولٹن مارکیٹ آرام باغ ٹاؤن میں سابقہ کھارادر کابینہ کے رکنِ مجلس قمر عطاری سے ملاقات کی۔

اس دوران ذمہ دار نے وکلا کے لئے افطار اجتماع کرنے اور رمضانُ المبارک میں دعوتِ اسلامی کے مختلف شعبہ جات کے لئے عطیات جمع کرنے کے حوالے سے اہم نکات پر گفتگو کی جس پرسابقہ ذمہ دار نے اپنی طرف سے مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی۔(رپورٹ:محمد صہیب یوسف عطاری ایڈووکیٹ شعبہ رابطہ برائے وکلاء ڈسٹرکٹ کورنگی، کانٹینٹ:غیاث الدین عطاری)


دعوتِ اسلامی کے زیرِ اہتمام 31 مارچ 2022ء بروز جمعرات صوبۂ پنجاب پاکستان کے شہر پتوکی میں قائم جامع مسجد بہارِ مدینہ میں نمازِ جنازہ کورس کا انعقاد کیا گیا جس میں مقامی عاشقانِ رسول نے شرکت کی۔

دورانِ کورس محمد دانش تفسیر عطاری نے شرکا کی تربیت کرتے ہوئے انہیں نمازِ جنازہ کی چند ضروری مسائل نمازِ جنازہ کا مکمل طریقہ سکھایا۔اس کےعلاوہ ذمہ دار نے شرکا ئے کورس کو دعوتِ اسلامی کے دینی ماحول سےہر دم وابستہ رہنے اور 12 دینی کاموں میں عملی طور پر حصہ لینے کا ذہن دیا۔(رپورٹ:علی ریاض عطاری تحصیل ذمہ دار سیکورٹی ڈیپارٹمنٹ، کانٹینٹ:غیاث الدین عطاری)