19 ذوالحجۃ الحرام, 1441 ہجری

: : :
(PST)

اللہ رب العزت کا کروڑوں بار احسان ہے کہ اس نے ہمیں پھر ایک بار رمضان المبارک کی خوشیاں دیکھنے نصیب فرمائیں اور اس مہینے کوئی بھی انسان جتنی عبادت کریگا وہ  اتنا ہی پھل پائے گا۔ رمضان المبارک کا نام سنتے ہی ذہنوں میں روزہ اور سحر و افطار کی یاد آجاتی ہے۔ سحری کے حوالے سے ہمارے نبی کریم کا فرمان ارشاد ہے کہ سحری کیا کرو کیونکہ اس میں برکت ہے۔ روزہ دار افراد سحری میں پانی یا کوئی اور مشروبات پینے کو زیادہ ترجی دیتے ہیں کہ زیادہ پانی پینے سے دن بھر پیاس نہیں لگے گی جو غلط عمل ہے زیادہ پانی پینے کے باعث اسی وجہ سے وہ غذا کم لے پاتے ہیں اور دن بھر بھوک اور پیاس سے نڈھال ہورہے ہوتے ہیں۔ ڈاکٹر فواد فاروق کا کہنا تھا کہ انسانی جسم میں اللہ پاک نے ایسا سسٹم رکھا ہے کہ ذرا سا بھی آپ کی ضرورت سے زیادہ پانی ہوگا وہ پیشاب کے ذریعے خارج ہوجائےگا۔

ڈاکٹر فواد فاروق کا کہنا تھا کہ سحری کے دوران چائے سے اجتناب برتیں اور اگر زیادہ دل چاہے توسحری کے شروع میں تھوڑی سی چائے پی لیں۔

ڈاکٹر فواد فاروق کا مزید کہنا تھا کہ سحری کے وقت آخر میں اگر تھوڑا دہی یا لسی پی لی جائے تو دن میں پیاس کا احساس کم ہوگا۔